فلم ریویو: ٹوٹ جائیں رشتوں کے دھاگے تو الفاظ ہو جاتے ہیں بے معانی، پیغام دے رہی ہے یہ شارٹ فلم ’رِبَن‘

یہ شارٹ فلم ’رِبَن‘ ایک باپ اور بیٹی کے درمیانی رشتے کی کہانی ہے۔ جس میں باپ ایک مصنف ہوتا ہے اور کہانیاں لکھتاہے۔ ٹائپ رائٹر کے کھٹ کھٹ اور سگریٹ کے دھوؤں سے اس کی بیٹی پریشان رہتی ہے۔ بنیادی طور پر یہ فلم ایک رائٹر کے احساسات و جذبات کی کہانی ہے۔

باپ اور بیٹی کے درمیان شروع شروع میں تلخیاں بھی دکھائی گئی ہیں مگر یہ تلخیاں در اصل ان دونوں کے درمیان محبت کی دلیل ہے۔ جبھی تو بیٹی نے اپنے دوست کو صرف اتنی سی بات پر ہمیشہ کے لیے الوداع کہہ دیا کیوں کہ اس نے اس کے والد کے بارے میں غلط خیال کیا۔

اس فلم میں ٹائپ رائٹر کے دھاگے کو زندگی اور رشتوں کی علامت بنا کر پیش کیا گیاہے۔ فلم کے آخر میں جب باپ کی آنکھیں دیکھنے سے قاصر ہو جاتی ہیں تب وہ اپنے غم زدہ دل کے ارمانوں کو کورے کاغذ پر قید کرنے کی کوشش کرتاہے۔

مگر اس بے چارے کو کیا پتہ کہ جن صفحات پر اس نے زندگی کی کہانیاں لکھنے کی کوشش کی تھی وہ سارے صفحات کورے ہی رہ گئے۔ اس فلم کا پیغام بھی یہی ہے کہ اگر رشتوں کے دھاگے ٹوٹ گئے تو پھر الفاظ کی کوئی قیمت باقی نہیں رہ جاتی۔

اس فلم میں شکتی سنگھ اور مانسی سنگھ نے بالترتیب باپ اور بیٹی کے کردار نبھائے ہیں۔ فلم کے مناظر کہیں بہت زیادہ صاف وشفاف ہیں تو کہیں بالکل دھندلے، شاید یہ کہانی کا تقاضا ہو۔ رائٹر کی کہانی پر فلم کیوں نہیں بن سکی اورفلم ہدایت کار گلشن کمار نے رائٹر سے وعدے کے باوجود ملاقات کیوں نہیں کی یہ جاننے کے لیے آپ کو یہ فلم دیکھنی ہوگی۔

 

 

انٹرٹینمنٹ اور سنیما جگت کی مزید خبروں کی اپ ڈیٹس کے لئےہمارا  FACEBOOK  اور   TWITTER  پیج لائیک کریں۔

ہماری ویب سائٹ cinekainaat.com پر خبریں پڑھنے کے لئے کلک کریں۔

Share

Check Also

ریو یو: منڈپ پر دولہے کو ہے انتظار، دلہن ہے فرار، عاشق کے ساتھ جنگل میں ہو رہی ہیں رنگ رلیاں

بالی وڈ کے معروف ہدایت کار امتیاز علی کی ڈائریکشن میں بننے والی یہ شارٹ …